ففتھ جنریشن وار ملک دشمنوں کے نہیں،عدلیہ کیخلاف ہورہی ہے، جسٹس قاضی فائزعیسیٰ

اسلام آباد.سپریم کورٹ میں براہ راست کوریج کی درخواست پر جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے دلائل دیتے ہوئے کہاکہ ملک دشمنوں کیخلاف ففتھ جنریشن وارنہیں ہورہی،عدلیہ کیخلاف ففتھ جنریشن وارشروع کی گئی۔

نجی ٹی وی سما نیوزکے مطابق سپریم کورٹ میں براہ راست کوریج کی درخواست پر جسٹس قاضی فائز عیسیٰ جواب الجواب کیلئے روسٹرم پر آگئے،جسٹس فائزعیسیٰ نے کہا کہ جسٹس منظورملک نے میری رہنمائی کی ہے،جسٹس منظورملک کی ہدایت پرکوشش کروں گاجذباتی نہ ہوں،جسٹس قاضی فائز نے دلائل دیتے ہوئے کہاکہ ملک دشمنوں کیخلاف ففتھ جنریشن وارنہیں ہورہی،عدلیہ کیخلاف ففتھ جنریشن وارشروع کی گئی،حکومتی سوشل میڈیا بریگیڈ میرے خلاف جھوٹ بول رہی ہے،سوشل میڈیا پر انسان اکیلا اپنا دفاع نہیں کر سکتا،مجھے برا بھلا نہیں کہا جارہا بلکہ پوری سپریم کورٹ کو برا بھلا کہا جا رہا ہے۔

جسٹس فائز عیسیٰ نے کہاکہ میڈیا کی آزادی سلب کی جارہی ہے،جو کچھ میں یہاں بولتا ہوں اس کے برعکس چلایا جاتا ہے،جسٹس عمرعطابندیال نے کہاکہ قاضی صاحب ہر انسان کی اپنی رائے ہوتی ہے،ایک بندے سے سن کر اگلا بندہ بتاتے ہوئے آدھی بات بھول جاتا ہے،امریکہ میں عدالتی کارروائی براہ راست نہیں بلکہ ریکارڈ رکھا جاتا ہے۔

جسٹس قاضی فائزعیسیٰ نے کہاکہ ہم امریکہ کے غلام نہیں نہ ہی انکے پیچھے چلنے کے پابند ہیں،ہمارے پاس ایمان کی طاقت ہے ہمارا رہنما قائد اعظم محمد علی جناح ہے،امریکہ میں عوام کے حقوق جس انداز میں دیئے جاتے ہیں وہ سب جانتے ہیں،چاہتا ہوں لوگ میری بات براہ راست سنیں،میری گفتگو کا مکمل حصہ میڈیا رپورٹ نہیں کرتا۔

جسٹس عمرعطابندیال نے کہاکہ آپ کے تحریری دلائل کا جائزہ لیاہے،آپ کے تمام دلائل اوپن کورٹ میں سماعت کے تھے،جسٹس قاضی فائزعیسیٰ نے کہاکہ آغاافتخار نے مجھے قتل کی دھمکی دی،اہلیہ مقدمہ درج کرانے گئیں پولیس نے کہاکہ وزیرداخلہ سے اجازت لینگے،پانچ دن بعد پولیس نے مقدمہ ایف آئی اے کو بھجوادیا۔

جسٹس فائزعیسیٰ نے کہاکہ مرزاافتخارالدین کو سپریم کورٹ میں پروٹوکول دیا گیا،میں قتل ہواتو شہیدکہلاﺅں اورجنت میں جاﺅں گا،ریاست مدینہ افتخار الدین مرزاکو آزادکررہی ہے،افتخار الدین کا تعلق شہزاداکبر سے نکلا لیکن تفتیش روک دی گئی ،میرے کیس میں عدالت نے فردوس عاشق اعوان کیخلاف کارروائی کاکہا، فردوس عاشق اعوان کو پنجاب میں اچھا عہدہ مل گیا۔

جسٹس عمر عطابندیال نے کہاکہ آپ نے ہمارافیصلہ چیلنج کررکھا ہے،ہر کوئی ایسا کہے گا فیصلہ چیلنج ہونے کے باوجودان پر عمل کریں ،فائزعیسیٰ نے کہا کہ عدالت کو نہیں رہاکہ فردوس عاشق اعوان کو جیل بھجیں ،کبھی خود بھی توہین عدالت کیس میں کسی کو جیل نہیں بھیجا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں