گیلانی کے سات ووٹ جان بوجھ کر ضائع کیے گئے؟وہ صحافی جس نے الیکشن سے پہلے ہی اپوزیشن کے پانچ سے سات لوگوں کی خبر لینے کا مشورہ دیا تھا

لاہور.گزشتہ روز چیئرمین اور ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کے انتخاب میں حکومت نے اپوزیشن کو اکثریت رکھنے کے باوجود شکست سے دو چار کر دیاہے ، یوسف رضا گیلانی 42 ووٹ لینے کامیاب رہے اور ان کے سات ووٹ مسترد ہوئے جبکہ صادق سنجرانی 48 ووٹ حاصل کر کے کامیاب ٹھہرے۔

اس صورتحال سے متعلق پاکستان کی معروف صحافی اور اینکر پرسن غریدہ فاروقی نے ٹویٹر پر پیغام جاری کرتے ہوئے پہلے ہی خبردار کر دیا تھا ، الیکشن سے ایک روز قبل غریدہ فاروقی نے ٹویٹر پرپیغام جاری کرتے ہوئے کہا تھا کہ ”مشتری ہوشیار باش!! حکومت کے پاس چیئرمین سینیٹ کی نمبرگیم48ہوچکی ہے۔چئیرمین منتخب کروانے کیلئے51ووٹ درکارہیں۔اپوزیشن اپنے5-7اراکین کی خبرلے! مصدّقہ اطلاعات ہیں گڑبڑحتمی مراحل تک پہنچ چکی ہے۔ اگر ابھی تدارک نہ کیاگیا تو سنجرانی کے اضافی ووٹ پکّے۔ پھر نہ کہنا خبر نہ ہوئی۔“

غریدہ فاروقی کی کہی گئی بات درست ثابت ہوئی اور حکومتی امیدوار صادق سنجرانی کو 48 ووٹ ملے جبکہ سات ووٹ مسترد ہو گئے ۔سینئر صحافی نے ٹویٹر پر الیکشن کے بعد پیغام جاری کرتے ہوئے کہا کہ ”ڈپٹی چیئرمین سینیٹ الیکشن میں ایک بھی ووٹ ضائع نہیں ہوا، اِس کا سادہ سا فوری مطلب تو یہ ہے کہ گیلانی الیکشن میں ووٹ جان بوجھ کر ضائع کیے گئے موقع فراہم کیا گیا پریذائیڈنگ آفیسر کو۔اپوزیشن کو 5-7ممبران کے بارے خبردار کیا تھا اور آج 7ہی ووٹ ضائع ہوئے۔“

اپنا تبصرہ بھیجیں