یہ آپکا کیس خراب کر رہے ہیں ، طاہر خلیل سندھو کے بولنے پر عدالت کا شہباز شریف سے مکالمہ

لاہور.احتساب عدالت میں رمضان شوگر مل ریفرنس میں ن لیگی رہنما طاہر خلیل سندھو کے دوران سماعت پر بولنے پر جج برہم ہو گئے، جج امجد نذیر نے کہاکہ آپ کیس میں وکیل نہیں ہیں آپ کیوں بول رہے ہیں؟، طاہر خلیل سندھو نے کہاکہ میں وکیل ہوں بولنے کا حق کا رکھتا ہوں ،عدالت نے شہباز شریف سے مکالمہ کرتے ہوئے کہاکہ یہ آپکا کیس خراب کر رہے ہیں ۔

نجی ٹی وی ہم نیوز کے مطابق احتساب عدالت لاہور میں رمضان شوگر مل ریفرنس کی سماعت ہوئی،جیل حکام نے شہباز شریف کو احتساب عدالت پیش کر دیا، اپوزیشن لیڈر قومی اسمبلی شہباز شریف روسٹرم پر آ گئے، شہباز شریف نے کہاکہ میرے وکیل موجود نہیں ہیں ابھی کیس نہ سنا جائے ، جج احتساب عدالت نے کہا کہ جرح امجد پرویز کے آنے پر کر لیں گے ابھی بیان ریکارڈ کر لیتے ہیں ،شہباز شریف نے بھی سماعت کچھ دیر کےلئے ملتوی کرنے کی استدعا کر دی۔

جج احتساب عدالت نے کہاکہ جرح بعد میں کریں گے ابھی بیان تو ریکارڈ کریں گے ،شہباز شریف نے کہاکہ میرا حق ہے کہ بیان ریکارڈ کراتے وقت میرا وکیل موجود ہو ۔

ن لیگی رہنما طاہر خلیل سندھو کے دوران سماعت پر بولنے پر جج برہم ہو گئے، جج امجد نذیر نے کہاکہ آپ کیس میں وکیل نہیں ہیں آپ کیوں بول رہے ہیں؟، طاہر خلیل سندھو نے کہاکہ میں وکیل ہوں بولنے کا حق کا رکھتا ہوں ،جج امجد نذیر نے شہبازشریف سے استفسار کیا کہ کیا یہ آپکے وکیل ہیں ؟،اگر ایسا ہوگا تو پھر ٹرائل نہیں ہوسکے گا۔

شہباز شریف نے جج سے مکالمہ کرتے ہوئے کہاکہ ہم یہاں آپکا وقت ضائع کرنے نہیں آئے ،ہم یہاں انصاف کے لیے آئے ہیں ،جج امجد نذیر نے کہاکہ انصاف ضرور ہوگا ہر حال میں انصاف ہوگا،عدالت نے شہباز شریف سے مکالمہ کرتے ہوئے کہاکہ یہ آپکا کیس خراب کر رہے ہیں ،عدالت نے طاہر خلیل سے مکالمہ کرتے ہوئے کہاکہ آپ نادان دوست نہ بنیں ،شہباز شریف نے کہاکہ طاہر خلیل سندھو کی طرف سے میں معافی مانگتا ہوں ،شہبازشریف نے طاہر خلیل سندھو کو بولنے سے روک دیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں