موٹروے زیادتی کیس، عدالت نے ملزمان کیخلاف چالان طلب کرلیا

لاہور.موٹروے زیادتی کیس میں عدالت نے ملزمان کیخلاف چالان طلب کرلیا اور سماعت2 فروری تک ملتوی کردی۔

نجی ٹی وی دنیا نیوز کے مطابق موٹروے زیادتی کیس کی سیشن کورٹ میں سماعت ہوئی،اے ٹی سی ججزاجلاس کے باعث ملزمان کوسیشن کورٹ پیش کیاگیا،سیشن عدالت کے جج حامدحسین نے سماعت کی،پراسیکیوشن نے کہاکہ چالان 14 روزمیں مکمل کرکے عدالت پیش کیاجاتاہے،عدالت نے ملزمان کیخلاف کیس کاچالان طلب کرتے ہوئے سماعت 2 فروری تک ملتوی کردی۔

دوسری جانب نجی وی ٹی ہم نیوز کے مطابق موٹروے خاتون زیاتی کیس میں پولیس نے ملزمان کیخلاف چالان تیار کرلیا،چالان 100سے زائد صفحات پر مشتمل ہے جس میں 40 گواہان کو شامل کیاگیاہے،گواہان میں متاثرہ خاتون، مقدمے کا مدعی اور 15 پر کال کرنے والا شخص بھی شامل ہے۔

ذرائع کاکہناہے کہ سانحے کے وقت 3 بچوں کو گواہوں کی لسٹ میں شامل نہیں کیا گیا،متاثرہ خاتون نے عابد ملہی اور شفقت کی شناخت پریڈ جیل میں کی۔

چالان کے متن کے مطابق ملزمان کی شناخت پریڈ جوڈیشل مجسٹریٹ کے سامنے کروائی گئی،متاثرہ خاتون کا 3 مرتبہ بیان ریکارڈ کیا گیا، متاثرہ خاتون نے ایک مرتبہ پولیس ،2 بار جوڈیشل مجسٹریٹ کو بیان ریکارڈ کروایا۔ملزم عابد ملہی اور شفقت سے برآمدگی بھی کی گئی،عابد ملہی نے پستول تھانہ فیکٹری ایریا شیخوپورہ سے برآمد کروایا،شفقت نے ڈنڈا بالامستری کے گھر سے برآمد کروایا،پولیس نے عابد ملہی اور شفقت بگا کا موبائل فون برآمد کیا۔

پولیس کی جانب سے تیار کردہ چالان کے متن میں کہاگیاہے کہ عابد ملہی نے خاتون سے لوٹی ایک لاکھ سے زائد کی رقم خرچ کردی،ملزم جب روپوش تھا اس دوران ساری رقم خرچ کردی، عابد ملہی نے خاتون کے سونے کے کڑے اور اے ٹی ایم بھی برآمد نہیں کروایا۔

چالان میں مزید کہاگیاہے کہ شفقت نے اقبال جرم کرلیا اور دفعہ 164 کا بیان ریکارڈ کروا دیا، شفقت عرف بگا کا بیان جوڈیشل مجسٹریٹ رحمان الہٰی نے ریکارڈ کیا،عابد ملہی نے تفتیشی کے روبرو اعتراف جرم کیا اور دفعہ 161 کا بیان ریکارڈ کروایا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں